ترکیہ میں زلزلے کے 23 دن بعد معجزاتی طور پر ملبے سے ایک کتے کو زندہ نکال لیا گیا

فوٹو: اسکرین گریب
فوٹو: اسکرین گریب

ترکیہ میں آئے خوفناک زلزلے کے 23 دن گزرنے کے بعد ملبے تلے دبے ہوئے ایک کتے کو معجزاتی طور پر زندہ نکال لیا گیا۔

واضح رہے کہ 6 فروری کو ترکیہ اور شام میں آنے والے 7.8 کی شدت کے زلزلے میں 50 ہزار سے زیادہ افراد جان سے گئے جب کہ لاکھوں زخمی اور دیگر افراد بے گھر ہوگئے۔

زلزلے کے نتیجے میں سیکڑوں عمارت تباہ ہوئیں جبکہ  ریسکیو حکام کی جانب سے ملبے کو ہٹانے کا کام اب بھی جاری ہے۔

رپورٹس کے مطابق ترکیہ میں تباہ کن زلزلے کے 23 دن بعد ایک کتے کو ملبے سے زندہ نکال لیاگیا۔

ریسکیو حکام کا کہنا ہے کہ کھانے، پانی اور سورج کی روشنی کے بغیر زندہ رہنے والے کتے کو منگل کے روز  2 گھنٹے طویل ریسکیو آپریشن کے بعد  ملبے سے زندہ  نکال کر اسپتال منتقل کیا گیا ۔

ریسکیو اہلکاروں کا کہنا ہے کہ ہمیں ملبے  میں سے آواز آئی، قریب جاکر سنا تو محسوس ہوا کہ ملبے تلے ایک کتا موجود ہے ،جگہ کافی تنگ تھی تاہم وہاں  ایک چھوٹا سا سوراخ تھا جس میں سے کتے کی ناک  دکھائی دی اور پھر ہم نے 2 گھنٹے کے آپریشن کے بعد کتے کو زندہ نکال لیا۔

سوشل میڈیا پر کتے کو ریسکیو کرنے کی ویڈیو وائرل ہورہی ہے جس نے ہر دیکھنے والے کو خوشی کے ساتھ حیرت میں مبتلا کردیا کہ زلزلے کے 23 دن گزرجانے کے بعد بھی بغیر کچھ کھائے پیے کتے کو زندہ بچالیا گیا۔ 

اس سے قبل ترکیہ میں آئے خوفناک زلزلے کو 17 روز گزرنے کے باوجود ملبے تلے دبی 8 بھیڑوں کو معجزاتی طور پر زندہ نکالا گیا تھا۔