Election 2024 Election 2024

کنگنا نے پریانکا چوپڑا کے بھارت چھو ڑنے کا قصور وار کرن جوہر کو ٹھہرا دیا

فوٹو: فائل
فوٹو: فائل

یہ کسی سے ڈھکی چھپی بات نہیں کہ بالی وڈ اداکارہ پریانکا چوپڑا بھارت چھوڑ کر اپنے شوہر کے ہمراہ امریکا منتقل ہوگئی ہیں، یہی وجہ ہے کہ وہ کافی عرصے سے فلموں میں بھی نظر نہیں آئیں۔

ایک حالیہ امریکی پوڈ کاسٹ میں گفتگو کرتے ہوئے پریانکا چوپڑا نے بھارت چھوڑ کر امریکا منتقل ہونے اور پھر وہاں کام کرنے سے متعلق گفتگو کی۔

اداکارہ پریانکا چوپڑا کا کہنا تھا کہ بالی وڈ انڈسٹری میں انہیں ایک طرف کردیا گیا تھا اور جس طرح کے کام کی خواہشمند وہ تھیں اس طرح کا کام انہیں نہیں دیا جارہا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ بالی وڈ میں انہیں ایک کونے میں دھکیلا جا رہا تھا اور کوئی انہیں کاسٹ نہیں کر رہا تھا، نہ ہی انہیں ویسی فلمیں دی جارہی تھیں جیسی وہ چاہتی تھیں، اسی لیے بالی وڈ سے وہ بریک لینا چاہتی تھیں۔

اداکارہ نے کہا کہ مجھے سیاست جیسے کھیل نہیں آتے، لوگ انڈسٹری میں سیاست کررہے تھے اور وہاں میں خود کو مسئلے میں نہیں ڈالنا چاہتی تھی۔

پریانکا کے اس بیان پر کنگنا رناوت  نے پریانکا کی حمایت میں بولتے ہوئے اداکارہ کے بھارت چھوڑنے کی وجہ بالی وڈ کے مشہور ہدایتکار کرن جوہر کو  قرار دیا۔

کنگنا رناوت  نے سوشل میڈیا پر بیان جاری کرتے ہوئے کہا  کہ  پریانکا کو بالی وڈ کے بارے میں یہی کہنا چاہیے تھا، یہاں لوگوں نے ان پر دباؤ ڈالا، انہیں  دھمکایا گیا اور انہیں بالی وڈ سے باہر کرکے بھارت چھوڑنے پر مجبور کیا گیا۔

کنگنا کا کہنا تھا کہ سب جانتے ہیں کہ کرن جوہر نے پریانکا چوپڑا پر پابندی لگا ئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ میڈیا کئی بار لکھ چکا ہے کہ شاہ رخ خان سے دوستی کی وجہ سے پریانکا اور کرن جوہر میں ہمیشہ  تنازع رہا اور فلمی مافیا ہمیشہ آؤٹ سائیڈر اداکاروں  کی تلاش میں رہتا ہے جسے وہ نشانہ بناسکے ، انہیں پریانکا چوپڑا میں بھی یہی نظر آیا اور اداکارہ کو ہراساں کرکے بھارت چھوڑنے پر مجبور کیا گیا۔

فوٹو: اسکرین شاٹ
فوٹو: اسکرین شاٹ

انہوں نے مطالبہ کیا  کہ اس  نفرت انگیز،گھٹیا اور زہریلے شخص کو فلم انڈسٹری کے کلچر اور ماحول کو برباد کرنے کے لیے قصور وار  ٹھہرایا جانا چاہیے۔

واضح رہے کہ پریانکا چوپڑا نے امریکی گلوکار نک جونس سے شادی کی ہے جس کے بعد وہ مستقل طور پر امریکا منتقل ہو چکی ہیں، دونوں کی ایک بیٹی بھی ہے جس کا نام ’مالتی میری جونس‘ ہے۔

مزید خبریں :