رضوانہ تشددکیس: سول جج عاصم حفیظ کو او ایس ڈی بنادیا گیا

فوٹو: انٹرنیٹ/فائل
فوٹو: انٹرنیٹ/فائل

لاہور:کمسن ملازمہ رضوانہ پر تشدد کےکیس کی ملزمہ کے شوہر سول جج عاصم حفیظ کو او ایس ڈی بنا دیا گیا۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے سول جج عاصم حفیظ کو راولپنڈی میں او ایس ڈی تعینات کردیا ہے۔

رجسٹرار لاہور  ہائی کورٹ نےعاصم حفیظ کا بطور  او ایس ڈی نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔

 عاصم حفیظ کو 19 اگست سے قبل راولپنڈی میں چارج سنبھالنےکی ہدایت کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ کمسن ملازمہ رضوانہ پر تشدد کیس کی تحقیقات جاری ہیں جس میں ملزمہ سومیہ عاصم کے شوہر اور سول جج عاصم حفیظ کو مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے طلب کر رکھا ہے جب کہ ان کی اہلیہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل میں ہیں۔

بچی پر تشددکا کیس

جنرل اسپتال لاہور میں زیرعلاج 14 سالہ بچی رضوانہ پرتشدد کا معاملہ 24 جولائی کو سامنے آیا تھا، بچی کی ماں نے جج کی اہلیہ پر تشدد کا الزام لگایا تھا، جب بچی کو اسپتال پہنچایا گیا تو اس کے سر کے زخم میں کيڑے پڑ چکے تھے، جسم پر تشدد کے نشانات تھے اور دونوں بازو ٹوٹے ہوئے تھے اور وہ شدید خوف کا شکار تھی۔

رضوانہ کے علاج کے لیے قائم میڈیکل بورڈ کے سربراہ پروفیسر جودت سلیم کے مطابق بچی کی طبیعت میں بہتری آرہی ہے اور اس کے انفیکشن میں بھی کمی ہوئی ہے۔

جج کا اہلیہ کے نفسیاتی مسائل کا اعتراف

ایک  انٹرویو میں سول جج عاصم حفیظ نے اپنی اہلیہ کے نفسیاتی مسائل کا یہ کہہ کر اعتراف کیا کہ وہ سخت مزاج ضرور تھیں پر ان کی بیوی نے انہیں بتایا ہےکہ کبھی مارپیٹ نہیں کی، گھر سے جاتے وقت بچی کی حالت ایسی نہیں تھی جیسی دکھائی گئی ہے۔

مزید خبریں :