Election 2024 Election 2024

اے آئی ٹیکنالوجی کی مدد سے گرگٹ کی طرح رنگ بدلنے والا لباس تیار

ہانگ کانگ کے ماہرین نے اسے تیار کیا ہے / رائٹرز فوٹو
ہانگ کانگ کے ماہرین نے اسے تیار کیا ہے / رائٹرز فوٹو

کیا آپ یقین کریں گے کہ بہت جلد آپ اپنے لباس کو اپنی پسند کے کسی بھی رنگ میں محض ہاتھ کے اشارے سے تبدیل کر سکیں گے؟

جی ہاں واقعی ایسا آرٹی فیشل انٹیلی جنس (اے آئی) ٹیکنالوجی کی بدولت ممکن ہونے والا ہے۔

ہانگ کانگ کی لیبارٹری فار آرٹی فیشل انٹیلی جنس ان ڈیزائن (اے آئی ڈی لیب) کے ماہرین نے اے آئی ٹیکنالوجی کے ذریعے رنگ بدلنے والا لباس تیار کیا ہے جس میں ایک ننھا کیمرا بھی موجود ہے۔

اے آئی ڈی لیب کے مطابق یہ ٹیکنالوجی لوگوں کو مختلف رنگوں کے اضافی ملبوسات خریدنے سے روکے گی جس سے کچرے میں کمی لانے میں مدد ملے گی۔

اس کپڑے میں آپٹیکل فائبر اور اون کو استعمال کیا گیا ہے اور اس سے تیار کردہ لباس گرگٹ کی طرح رنگ بدلتا ہے۔

مثال کے طور پر فیس بک کے لائیک بٹن کی طرح انگوٹھے کو اوپر کرنے پر لباس گہرے نیلے رنگ کا ہو جاتا ہے جبکہ ہاتھ سے دل بنانے پر لباس گلابی رنگ کا ہو جاتا ہے اور اوکے (OK) سائن سے وہ سبز ہو جاتا ہے۔

فی الحال یہ ملبوسات عام افراد کے لیے دستیاب نہیں / رائٹرز فوٹو
فی الحال یہ ملبوسات عام افراد کے لیے دستیاب نہیں / رائٹرز فوٹو

لباس میں نصب کیمرا ہاتھوں کے اشارے کو سمجھ کر رنگ بدلنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

ماہرین کے مطابق لباس کے رنگوں کو فون پر ایک ایپ کے ذریعے بھی بدلنا ممکن ہے۔

تحقیقی ٹیم کی سربراہ پروفیسر Jeanne Tan نے بتایا کہ یہ لباس بہت نرم ہے۔

ایپ کے ذریعے بھی لباس کے رنگ بدلنا ممکن ہے / رائٹرز فوٹو
ایپ کے ذریعے بھی لباس کے رنگ بدلنا ممکن ہے / رائٹرز فوٹو

انہوں نے کہا کہ اس کو چھونے سے کسی عام لباس جیسا ہی احساس ہوتا ہے۔

ماہرین کو توقع ہے کہ مستقبل قریب میں اس ٹیکنالوجی کا استعمال عام ہو جائے گا، فی الحال اس سے تیار کردہ ملبوسات کو شاپنگ سینٹرز اور ایسے ہی دیگر عوامی مقامات پر رکھا گیا ہے۔

مزید خبریں :