دنیا
27 جنوری ، 2018

کابل میں ایمبولینس کے ذریعے خود کش حملہ، 95 افراد ہلاک، 158 زخمی


کابل: افغانستان کے دارلحکومت کابل میں کار بم دھماکے کے نتیجے میں کم از کم 95 افراد ہلاک اور 158 زخمی ہوگئے۔

افغان میڈیا کے مطابق دھماکا دارلحکومت کابل میں وزارت داخلہ کی پرانی عمارت کے باہر  دوپہر ایک بجے ہوا جس میں دھماکا خیز مواد سے بھری ایمبولنس کو دو سیکیورٹی چیک پوائنٹس کے درمیان اڑا دیا گیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ دھماکے سے متاثر ہونے والے بیشتر افراد عام شہری ہیں۔

خبررساں اداروں کے مطابق دھماکے سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 95 ہوگئی ہے جب کہ تقریباً 158 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

افغان ٹی وی طلوع نیوز کے مطابق وزارت صحت کے ترجمان محمد اسماعیل کاوسی نے دھماکے سے ہونے والی ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ زخمی ہونے والے افراد کو شہر کے مختلف اسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق حملے کی ذمہ داری طالبان نے قبول کرلی ہے۔

گزشتہ ہفتے کابل کے ایک لگژری ہوٹل پر بھی حملے کی ذمی داری طالبان نے قبول کی تھی جس میں 22 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

پاکستان کی جانب سے حملے کی مذمت

پاکستان نے کابل میں ہونے والے خود کش حملے کی شدید مذمت کی ہے۔ پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان اس حملے کی شدید مذمت کرتا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری پیغام میں ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ ’’پاکستانی عوام اور حکومت کابل میں ہونے والے اس حملے کی مذمت کرتے ہیں اور ان خاندانوں سے اظہار ہمدردی کرتے ہیں جن کے پیارے اس حملے میں جاں بحق و زخمی ہوئے۔ دہشتگردی کسی مسئلے کا حل نہیں‘‘۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM