Can't connect right now! retry

دنیا
19 جنوری ، 2020

یمن میں فوجی کیمپ کی مسجد پر میزائل حملہ، 80 اہلکار جاں بحق

یمنی حکومت کی جانب سے اس حملے کا الزام حوثی باغیوں پر عائد کیا گیا ہے،فوٹو:فائل

یمن میں ایک فوجی تربیتی کیمپ  کی مسجد پر میزائل حملے میں 80 فوجی اہلکار جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق میزائل نے یمن کے وسطی صوبے مارب میں قائم فوجی تربیتی کیمپ کی مسجد کو نشانہ بنایا۔

فوجی حکام کا کہنا ہے کہ حملے کے وقت مسجد میں نماز پڑھنے کے لیے بڑی تعداد میں فوجی اہلکار موجود تھے جب کہ اموات کی تعداد میں مزید اضافے کا خدشہ ہے۔

یمنی حکومت کی جانب سے اس حملے کا الزام حوثی باغیوں پر عائد کیا گیا ہے تاہم ابھی تک کسی نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔

یمنی صدر منصور ہادی نے حملے کو بزدلانہ کارروائی قرار دیتے ہوئے اس کی سخت مذمت کی ہے۔

منصور ہادی کا کہنا ہے کہ یہ حملہ ظاہر کرتا ہے کہ حوثیوں کو امن کے حوالے سے کوئی دلچسپی نہیں۔

یمن تنازع کیا ہے ؟

یاد رہے کہ عرب ملک یمن ستمبر 2014 سے خانہ جنگی کا شکار ہے جب ایران نواز حوثی ملیشیا نے دارالحکومت صنعا سمیت یمن کے  بڑے حصے پر قبضہ کرلیا تھا جس کے باعث یمنی صدر منصور ہادی کو بیرون ملک  پناہ لینی پڑی تھی۔

یہ تنازع اس وقت مزید سنگین ہوگیا جب 2015 میں سعودی عرب کی قیادت میں عرب ممالک کے عسکری اتحاد نے منصور ہادی کی حکومت بحال کرانے کے لیے یمن پر  فوجی کارروائی کا آغاز کیا۔

رپورٹ کے مطابق 2015 سے اب تک عرب عسکری اتحاد کی جانب سے 18 ہزار سے زائد حملے کیے گئے، اس دوران دونوں جانب سے طاقت کے استعمال کے نتیجے میں 60 ہزار سے زائد افراد ہلاک اور ہزاروں زخمی ہیں جب کہ  لاکھوں افراد بے گھر ہوچکے ہیں۔

 اقوام متحدہ کی جانب سے اس تنازعے کے نتیجے  میں پیدا ہونے والی صورتحال کو دنیا کا بدترین انسانی بحران قرار دیا جاچکا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM