Can't connect right now! retry

ملک میں مہنگائی کی شرح 14.6 فیصد تک پہنچ گئی

ملک میں مہنگائی کا جن بے قابو ہوگیا ہے اور جنوری 2020 میں مہنگائی کی شرح 14.6 فیصد رہی جو  کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حکومت میں سب سے زیادہ ہے۔

ادارہ شماریات پاکستان کی ماہانہ رپورٹ کے مطابق  دسمبر 2019 میں مہنگائی کی شرح 12.6 فیصد تھی جو جنوری 2020 میں بڑھ کر 14 اعشاریہ 6 فیصد ہو گئی جب کہ جنوری 2019 میں یہ شرح 5.6 فیصد تھی۔

رپورٹ کے مطابق دسمبر 2019کے مقابلے میں جنوری 2020میں دال مونگ 19.74 فیصد جب کہ  دال ماش 10.3 فیصد مہنگی ہوئی۔

دال چنا 18 فیصد، مرغی 17.3 فیصد اور گندم کی قیمت میں 12.63فیصد اضافہ ہوا۔ 

ادارہ شماریات  کے مطابق جنوری میں تازہ سبزیوں کی قیمت میں 11 فیصد اضافہ ہوا جب کہ  چینی 5 فیصد اور آٹا ساڑھے 7 فیصد مہنگا ہوا۔

ادارہ شماریات کے مطابق شہری علاقوں میں ایک سال میں ٹماٹر 158 فیصد، پیاز 125 فیصد، تازہ سبزیاں 93 فیصد، آلو 87 فیصد، چینی 86 فیصد اور آٹا 24 فیصد مہنگا ہوا۔

 دیہی علاقوں میں ایک سال میں ٹماٹر 211 فیصد، پیاز 137 فی صد، آلو 111 فیصد، تازہ سبزیاں 104 فیصد اور آٹا 25 فیصد مہنگا ہوا۔

ادارہ شماریات کی رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ایک سال میں آٹا 25 فیصد مہنگا ہوا جب کہ چینی کی قیمت میں 86 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق  پاکستان میں ایک ہفتے کے دوران روزمرہ استعمال کی 14 اشیاء مہنگی ہوگئی ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM