Can't connect right now! retry

کراچی میں کورونا وائرس سے متاثرہ ایک اور مریض صحتیاب ہوگیا

سندھ میں تمام کیسز اہمیت کے حامل ہیں، صوبے میں اب تک کوئی بھی مقامی کیس نہیں ہے تمام لوگ بیرون ملک سے متاثر ہوکر آئے، وزیراعلیٰ سندھ— فوٹو: فائل

کراچی میں کرونا وائرس سے متاثر ہونے والا ایک اور مریض صحت یاب ہوگیا، وزیر اعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ جو پہلے 6 کیسز تھے ان میں سے ایک مریض ٹھیک ہوگیا ہے جسے جلد اسپتال سے ڈسچارج کردیا جائے گا۔

وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ سندھ میں ابھی تک تمام کیسز اہمیت کے حامل ہیں، صوبے میں اب تک کوئی بھی مقامی کیس نہیں ہے تمام لوگ بیرون ملک سے متاثر ہوکر آئے۔

وزیراعلیٰ سندھ کی زیر صدارت کورونا وائرس پر ٹاسک فورس کا اجلاس کراچی میں ہوا۔ اجلاس میں وزیر صحت، وزیر بلدیات، مشیر قانون اور میئر کراچی سمیت چیف سیکرٹری، آئی جی پولیس، کمشنر کراچی سمیت دیگر حکام شریک ہوئے۔

وزیر اعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا گیا کہ گذشتہ روز 19 افراد کے ٹیسٹ کیے تھے جن میں 9 افراد کے ٹیسٹ مثبت آئے، حیدرآباد کے کیس کے 2 قریبی روابط تھے جن میں ایک مثبت آیا ایک منفی ہے۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ 2 افراد کے نمونے ابھی بھیجے گئے ہیں جن کے نتائج آنا باقی ہیں۔

وزیر اعلیٰ سندھ کو بتایا کہ سندھ میں اب تک 162 افراد کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں جن میں 147 منفی ہیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے بتایا کہ سندھ میں ابھی تک تمام کیسز اہمیت کے حامل ہیں۔ ہم نے پہلے دن سے اس مسئلہ کو روکنے کی کوشش کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کسی کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، میں عوام سے صرف احتیاط کی درخواست کرتا ہوں۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ میں اب تک کورونا وائرس کے 15 مثبت کیسز کی تشخیص ہوچکی ہے اور یہ تمام کیسز باہر سے سفر کرکے آنے والوں کے ہیں ان میں سے کوئی بھی کیس یہاں رہنے والوں میں تشخیص نہیں ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ ہمیں ہوائی اڈے پر ایران، افغانستان، اٹلی اور اس طرح کے دیگر ممالک سے آنے والے مسافروں کی جانچ پڑتال میں زیادہ محتاط رہنا ہوگا اور مشتبہ افراد کو شہر کے اندر لانے کے بجائے وہاں قرنطینہ میں رکھنا ہوگا۔

اجلاس میں وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو، وزیر بلدیات ناصر شاہ، مشیر قانون مرتضیٰ وہاب، میئر کراچی وسیم اختر، چیف سیکرٹری ممتاز شاہ، آئی جی سندھ مشتاق مہر، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکرٹری ساجد جمال ابڑو، کمشنر کراچی افتخار شہلوانی ، سیکرٹری داخلہ عثمان چاچڑ، سیکرٹری خزانہ حسن نقوی، سیکرٹری صحت زاہد عباسی، ڈی جی پی ڈی ایم اے سلمان شاہ ، کور 5 ، رینجرز ، ایف آئی اے ، ائیرپورٹ سروسز، سول ایوی ایشن ، ڈبلیو ایچ او، آغا خان اسپتال اور انڈس اسپتال کے نمائندوں نے شرکت کی۔

67 سالہ مریض صحتیاب ہوگیا

اجلاس کو بتایا گیا کہ پہلا مریض صحت یاب ہوکر گھر لوٹ چکا ہے جبکہ دوسرا مریض جو 67 سال کی عمر کا ہے اور وہ زیادہ خطرے کا مریض تھا وہ بھی منگل کو صحت یاب ہوگیا ہے اور اُس کا ٹیسٹ منفی آچکا ہے، کل اس کا دوبارہ ٹیسٹ کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ 167 زائرین اپنے گھروں پر قرنطینہ میں ہیں، قرنطینہ میں موجود 25 زائرین اپنی آئیسولیشن کی مدت 11 مارچ کو مکمل کریں گے ،34 زائرین 12 مارچ کو، 66زائرین 13 مارچ کو اپنی آئیسولیشن کی مدت مکمل کریں گے۔

کراچی ائیرپورٹ کو فول پروف بنانا ہوگا، وزیراعلیٰ سندھ

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ کراچی ائیرپورٹ پر روزانہ تقریباً 4000 مسافر اترتے ہیں لہٰذا ان کی اسکریننگ کے انتظامات کو فول پروف بنانا ہوگا۔

انہوں نے چیف سکرٹری کو ہدایت کی کہ وہ وفاقی حکومت سے بات کریں اور ان سے درخواست کی جائے کہ وہ کورونا وائرس کے مشتبہ افراد کے لیے ہوائی اڈے پر ہی قرنطینہ کے انتظامات کریں۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ نمونیا یا کورونا وائرس کی علامت والے مسافروں میں سے کسی کو بھی ہوائی اڈے سے باہر نہ لایا جائے اور نہ ہی اسے دوسروں کے سامنے ظاہر کیا جائے۔

چیف سکرٹری نے وزیر اعلیٰ سندھ کو بتایا کہ محکمہ صحت نے ائیرپورٹ پر 32 پیشہ ور افراد کو تعینات کیا ہے، ہوائی اڈے پر صحت کے عملے کو دوگنا کررہے ہیں تاکہ آنے والے ہر مسافر کی صحیح جانچ کی جاسکے۔

وزیر اعلیٰ سندھ کی ہدایت پر نجی اسپتالوں نے 691 مریضوں کا ڈیٹا شیئر کیا اور ان میں سے کسی کی بھی تشخیص مثبت نہیں آئی ہے۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کراچی ائیرپورٹ پر امیگریشن کاؤنٹرز پر ہیلتھ ایجوکیشن اور اسکریننگ ڈیسک قائم کی جائے گی۔

12 مارچ سے پی ایس ایل میچز کراچی میں کرانے کا اعلان

وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے ایک اور اہم فیصلہ لیتے ہوئے پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے میچز 12 مارچ سے کراچی میں کروانے کا اعلان کیا۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ پی ایس ایل کے میچز شہر میں پہلے ہی سے طے تھے، انہوں نے چیف سکرٹری اور آئی جی پولیس کو ہدایت کی کہ وہ اپنے شیڈول کے مطابق پی ایس ایل میچوں کے انعقاد کے لیے ضروری انتظامات کریں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ آپ شائقین کے لیے ایک ایڈوائزری جاری کریں، وزیر بلدیات سید ناصر شاہ اور کمشنر کراچی افتخار شہلوانی پی سی بی حکام کے ساتھ اجلاس منعقد کریں اور تمام احتیاطی تدابیر پر تبادلہ خیال کریں۔

انہوں نے زور دیا کہ اسٹیڈیم میں ہینڈ واش سینی ٹائزر بکس لگائیں اور وہ افراد جنہوں نے ایران کا سفر کیا ہے انہیں اسٹیڈیم نہ آنے کا مشورہ دیں۔

خیال رہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس کے آج مزید 3 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد ملک میں تصدیق شدہ متاثرہ افراد کی تعداد 19 ہوگئی ہے۔

محکمہ صحت سندھ کے حکام کے مطابق نئے آنے والے کیسز میں سے ایک کا تعلق حیدرآباد اور ایک کا کراچی سے ہے جبکہ ایک کیس کوئٹہ سے سامنا آیا ہے البتہ 12 سالہ بچے کا تعلق دادو سے ہے جو تفتان سے کوئٹہ پہنچا تھا۔

 سندھ میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 15 ہوگئی ہے ان میں سے 14 کیسز کراچی میں سامنے آئے ہیں جبکہ کراچی کے 2 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM