Can't connect right now! retry

دنیا
31 مارچ ، 2020

کورونا سے بچاؤ کیلیے ملیریا کی دوا کھانے والا ڈاکٹر جاں بحق

فوٹو: فائل

خطرناک عالمی وبا کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے ملیریا کی دوا کھانے والا ڈاکٹر جاں بحق ہوگیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی ریاست آسام میں ایک ڈاکٹر نے کورونا وائرس سےبچنے کے لیے ملیریا کی دوا ہائیڈروکس کلوروکوئین کھائی جس کے بعد طبعیت بگڑنے پر انہیں مقامی اسپتال میں منتقل کیا گیا۔

44 سالہ اُتپل جیت برمان نامی ڈاکٹر نے کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے اپنی ذمہ داری پر ملیریا کی دوائی کھائی تھی جسے کھانے کے بعد انہیں دل کا دورہ پڑنے کے باعث اسپتال منتقل کیا گیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ابھی تک اس بات کی تصدیق نہیں ہوئی کہ آیا ڈاکٹر کو دوا کھانے سے ہی دل کا دورا پڑا۔

لیکن بھارتی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر نے دوائی کھانے کے بعد اپنے دوست کو واٹس ایپ پر میسج کیا تھا کہ دوا کھانے کے بعد سے ہی ان کی حالت خراب ہورہی ہے اور وہ اچھا محسوس نہیں کر رہے۔

خیال رہے کہ امریکا کی فوڈ اینڈ ڈرگ انتظامیہ (ایف ڈی اے) نے مخصوص کورونا مریضوں کی جان بچانے کے لیے ہائیڈروگزی کلوروکوئن سلفیٹ اور کلوروکوئن فاسفیٹ پراڈکٹس کے ہنگامی استعمال کی اجازت دی ہے۔ 

ایف ڈی اے نے خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کلوروکوئن اورہائیڈروکسی کلوروکوئن کورونا کے ہر مریض کے استعمال کے لیے ہرگز نہیں ہے اور یہ دوا صرف ان مریضوں کے لیے ہے جن کی جان کو سنگین خطرات لاحق ہوں۔

دوسری جانب انڈین کاؤنسل آف میڈیکل ریسرچ (آئی سی ایم آر) کی جانب سے بھی لوگوں کو خبردار کیا گیا ہے کہ ملیریا کی دوائی کو کووڈ-19 سے بچاؤ کے لیے استعمال نہیں کیا جا سکتا۔

واضح رہے کہ بھارت میں اب تک ایک ہزار 117 کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تصدیق کی جاچکی ہے جب کہ وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 32 ہو گئی ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM