Can't connect right now! retry

برطانیہ میں کورونا کا مقابلہ کرتے ہوئے پاکستانی خاتون ڈاکٹر انتقال کرگئیں

برطانیہ میں کورونا وائرس کا مقابلہ کرتے ہوئے ایک اور  پاکستانی  ڈاکٹر میمونہ رعنا انتقال کرگئیں۔

میمونہ رعنا پہلی پاکستانی خاتون ڈاکٹر ہیں جنہوں نے نیشنل ہیلتھ  سروس برطانیہ  کی جانب سے کورونا وائرس کے خلاف جنگ لڑتے ہوئے جان دی۔

 ان سے قبل 2 پاکستانی ڈاکٹر ناصر خان اور ڈاکٹر حبیب زیدی بھی کورونا کے خلاف جنگ میں اپنی جان قربان کرچکے ہیں۔

48 سالہ ڈاکٹر میمونہ کا تعلق لاہور سے تھا اور وہ 15 برسوں سے مشرقی لندن میں اپنے شوہر ڈاکٹر عظیم قریشی کے ہمراہ رہائش پذیر تھیں، دونوں کی ایک 8 سالہ بیٹی بھی ہے۔

ڈاکٹر میمونہ کے شوہر  ڈاکٹر عظیم قریشی نے اپنی اہلیہ کی کورونا وائرس سے موت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ان کی اہلیہ میں 8 اپریل کو کورونا کی علامات ظاہر ہوئی تھیں۔

 ٹیسٹ کرانے پر دونوں میاں بیوی میں کورونا کی تصدیق ہوئی تھی ، 11 اپریل کو طبیعت بگڑنے پر ڈاکٹر میمونہ کو اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ 16 اپریل کو انتقال کرگئیں۔

 ڈاکٹر عظیم قریشی کا کہنا ہے کہ  میمونہ اپنی شائستگی، ذہانت اور منفرد انداز کے سبب ہمیشہ یادوں کا حصہ رہیں گی، وہ پیار کرنے والی اہلیہ اور شفیق ماں تھیں، ان کے انتقال پر خاندان کے افراد ہی نہیں بلکہ تمام جاننے والے افراد غم سے نڈھال ہیں۔

 برطانیہ میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک لاکھ 61 ہزار  ہوگئی

خیال رہے کہ برطانیہ میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد  ایک لاکھ 61 ہزار ہوچکی ہے جب کہ 21 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

برطانیہ میں کورونا کا شکار ہونے والوں میں 100 سے زائد ڈاکٹر اور طبی عملے کے دیگر افراد  شامل ہیں۔ 

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM