Can't connect right now! retry

ٹوئٹر ملازمین ہمیشہ گھروں سے کام کر سکتے ہیں

فوٹو: فائل

عالمی وبا کورونا وائرس کے پیشِ نظر متعدد کمپنیوں نے اپنے ملازمین کے تحفظ کے لیے انہیں گھر سے کام کرنےکی اجازت دے رکھی ہے۔

مقبول ترین ٹیکنالوجی کمپنیاں گوگل، فیس بک اور ٹوئٹر کے ملازمین بھی موجودہ صورتحال کی وجہ سے گھروں سے ہی کام کر رہے ہیں۔ 

اس ضمن میں مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر کے سربراہ جیک ڈورسی کا کہنا ہے کہ ان کے ملازمین جب تک چاہیں گھر سے کام کر سکتے ہیں۔

کمپنی ترجمان کے مطابق جیک ڈورسی نے ملازمین سے کہا ہےکہ زیادہ تر افراد کو کورونا وائرس کی وبا ختم ہونے کے بعد بھی گھروں سے کام کرنے کی اجازت ہوگی۔

کمپنی ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ گزشتہ چند مہینوں میں ثابت ہو گیا کہ ہمارے ملازمین گھروں سے کام کر سکتے ہیں، تو اگر کمپنی کے ملازمین نے چاہا کہ وہ آگے بھی گھروں سے ہی کام کریں تو انہیں اجازت دی جائے گی۔

علاوہ ازیں انہوں نے کہا کہ اگر ملازمین ایسا نہیں بھی چاہیں گے تو کمپنی تب بھی جب  ضروری اور محفوظ سمجھے گی تو دفتروں کو احتیاطی تدابیر کے ساتھ کھول دے گی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل سماجی رابطوں کے مقبول ترین پلیٹ فارم فیس بک اور گوگل نے اپنے ملازمین کے لیے گھر سے کام کرنے کی پالیسی میں 7 ماہ کا مزید اضافہ کیا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM