Can't connect right now! retry

پاکستان
09 اگست ، 2020

بارشوں سے دادو میں تباہی، ڈیم کے بند میں شگاف سے 300 سے زائد دیہات زیر آب آگئے

بارشوں کے بعد  دادو میں سیلابی ریلوں سے تباہی مچ گئی ہے اور  نئیں گج ڈیم کے حفاظتی بند میں شگاف سے 300 سے زائد گاؤں زیرآب آگئے۔

سندھ کے ضلع دادو میں کیر تھر کے پہاڑی سلسلوں میں بارشوں سے ندی نالے بپھر گئے ہیں۔

تحصیل جوہی کے علاقے کاچھو کے پہاڑی علاقوں میں ندی نالوں میں طغیانی آگئی جب کہ کئی دیہات متاثر اور متعدد زیر آب آگئے ہیں۔ 

سیلاب میں پھنسے افراد کو بچانے کے لیے پاک فوج اور رینجرز کے دستے جوہی پہنچ گئے ہیں، سیلاب میں پھنسے متعدد افراد کو نکال لیا گیا ہے  جب کہ دیگر کو نکالنے کا کام جاری ہے۔

ڈپٹی کمشنر  راجہ شاہ زمان کے مطابق ضلعی انتظامیہ اور پاک فوج کی جانب سے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔

انہوں نے بتایا کہ  برساتی ریلے میں پھنسے افراد کو کشتیوں کی مدد سے نکالا جا رہا ہے، متاثرین کے لیے سرکاری تعلیمی اداروں کی عمارتوں میں عارضی کیمپ قائم کیے جا رہے ہیں۔

دوسری جانب آر ڈی 44 کے مقام پر حفاظتی بند میں پڑنے والے 10 فٹ چوڑے شگاف کو  محکمہ انہار کا عملہ پرُ کرنے میں مصروف ہے۔

 نئیں گج ڈیم کے حفاظتی بند میں شگاف سے تین سو سے زائد گاؤں زیرآب آگئے ہیں اور  زمینی رابطے منقطع ہوگئے ہیں۔

 پہلی ترجیح بند کا شگاف پُرکرنا ہے ،وزیراعلیٰ سندھ

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے سندھ میں برساتی ریلے سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور کہاکہ ڈیم کےتین مقامات پرشگاف پڑا ہے، پہلی ترجیح شگاف پُرکرنا ہے،پانی میں گھرے شہریوں کوبروقت نہ نکالنے کی وجوہات کوچیک کیا جائے گا۔

دوسری جانب انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) کے مطابق  حالیہ بارشوں اور طوفان کے باعث نئیں گج ڈیم کےحفاظتی پشتےکو نقصان پہنچا اور گج ڈیم کے حفاظتی بند میں شگاف پڑنے سے قریبی علاقے زیر آب ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی انجینئرز ، آرمی میڈیکل ٹیمیں اور پاک فوج کے جوان موٹر بوٹس کے ساتھ متاثرہ علاقوں میں پہنچ گئے ہیں۔ 

دیگر شہروں میں بھی بارشوں کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری

حیدرآباد، تھرپارکر، مٹھی، بدین، نوکوٹ، ٹنڈو محمد خان سمیت سندھ کے مختلف حصوں میں کہیں ہلکی اور کہیں تیز بارشوں کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے۔

ادھر گلگت بلتستان کے ضلع دیامر کے گاؤں تھور میں موسلا دھار بارش سے ندی نالوں میں طغیانی آگئی ہے۔

تھور گاؤں کا لنک روڈ متعدد مقامات پربند ہوگیا جب کہ کوہستان میں لوٹر کے مقام پر لینڈ سلائیڈنگ کے باعث شاہراہ قراقرم اور ناران میں شاہراہ بابو سرگیٹی داس کے مقام پر بند ہوگئی ہے، سڑکوں کی بندش سے مسافر اور سیاح پھنس گئے ہیں۔

پنجاب کے شہروں رحیم یار خان، چکوال میں تیز بارش ہوئی جب کہ کوہ سلیمان کے پہاڑی سلسلوں میں بارش کے بعد ندی نالوں میں طغیانی آگئی ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM