Can't connect right now! retry

پاکستان
24 ستمبر ، 2020

سندھ میں اسکولز کھولنے کے معاملے پر سعید غنی اور عذرا پیچوہو میں اختلاف

سندھ میں پہلی تا آٹھویں جماعت کے طالب علموں کیلئے اسکولز کھولنے کے معاملے پر وزیر تعلیم سعید غنی اور وزیر صحت عذرا پیچوہو کے درمیان اختلاف رائے سامنے آگیا۔

وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے لہٰذا موجودہ صورت حال میں اسکول کھولنا درست فیصلہ نہیں ہے۔

جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر صحت کا کہنا تھا کہ وائرس کی شرح 1.5 فیصد سے 3 فیصد تک بڑھ گئی ہے، موجودہ حالات میں کورونا کی دوسری لہر کی پیش گوئی ہے۔

وزیر صحت سندھ نے کہا کہ کورونا کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے، موجودہ صورت حال میں اسکول کھولنا درست عمل نہیں ہے، پرائمری اسکولوں کو کھولنے میں جلدی نہ کی جائے، پرائمری اسکولوں کو کم سے کم ایک سے ڈیڑھ ماہ کا وقت دینا ضروری ہے۔

دوسری جانب صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی کا کہنا ہے کہ تمام تعلیمی ادارے 28 ستمبر سے کھل جائیں گے، اسکول کھولنے میں کوئی مسئلہ نہیں، کورونا کیسز میں اضافہ نہیں ہوا بلکہ ٹیسٹ کی تعداد بڑھی تو کیسز بڑھے۔

خیال رہے کہ کورونا وبا کی وجہ سے سندھ میں تعلیمی ادارے مارچ میں بند کردیے گئے تھے۔

بعد ازاں 15 ستمبر سے ملک بھر میں تعلیمی ادارے کھول دیے گئے تھے جبکہ  پہلی تا آٹھویں کلاس کے طلبہ کیلئے 23 ستمبر سے اسکولز کھولنے کا اعلان کیا گیا تھا تاہم سندھ نے 23 ستمبر سے اسکولز کھولنے کا فیصلہ ایک ہفتے کیلئے مؤخر کردیا تھا لیکن دیگر صوبوں میں اسکولز کھول دیے گئے تھے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM