پاکستان
25 نومبر ، 2021

نور مقدم کیس:اہم سی سی ٹی وی فوٹیج وائرل ہونے کی تحقیقات ایف آئی اے کو کرنے کا حکم

نور مقدم قتل کیس میں عدالت نے ڈی جی ایف آئی اے کو کیس کی سی سی ٹی وی فوٹیج وائرل ہونےکی تحقیقات کرانے کا حکم دے دیا۔ 

اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں نور مقدم قتل کیس سے متعلق تین مختلف درخواستوں پر ایڈیشنل سیشن جج عطا ربانی نے احکامات جاری کردیے۔ 

شریک ملزمہ عصمت آدم جی کی مکمل سی سی ٹی وی فراہمی کی درخواست عدالت نے خارج کردی جبکہ پراسیکیوشن کی دو نئے گواہ ڈاکٹر انعم اور ڈاکٹر حماد کو طلب کرنے کی درخواست منظور کرلی گئی۔ 

اس کے علاوہ عدالت نے ڈی جی ایف آئی اے کو کیس کی سی سی ٹی وی فوٹیج وائرل ہونے کی تحقیقات کرانے کا حکم بھی دیا۔

عدالت نے تینوں درخواستوں پر گزشتہ روز دلائل کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

واضح رہے کہ نور مقدم قتل کیس سے متعلق ایک سی سی ٹی وی فوٹیج  منظر عام پر آئی تھی جس میں کیس کے گرفتار مرکزی ملزم ظاہر شاہ کو مقتولہ نور مقدم کو زبردستی اندر لے جاتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM