پاکستان
16 دسمبر ، 2021

بلوچستان حکومت اور گوادر تحریک کے درمیان ہونے والا معاہدہ منظر عام پر آگیا

بلوچستان حکومت اور گوادر کو حق دو تحریک کے درمیان ہونے والا معاہدہ منظر عام پر آگیا۔

حکومت کی جانب سے مطالبات پورے کرنے کی یقین دہانی کے بعد تحریک کے سربراہ مولانا ہدایت الرحمٰن نے گوادر میں دھرنا ختم کرنے کا اعلان کیا۔

گوادر میں غیر قانونی ٹرالنگ پر مکمل پابندی عائد ہوگی، بارڈر ٹریڈ کی نگرانی ضلعی انتظامیہ کے حوالے کی جا ئے گی جبکہ تحریک کے کارکنوں پر قائم مقدمات فوری طور پر ختم کیے جائیں گے۔

بلوچستان حکومت اور ’گوادر  کو حق دو‘ تحریک کے درمیان طے پانے والے معاہدہ کے مطابق مکران ڈویژن میں غیر ضروری چیک پوسٹوں کے خاتمے کیلئے کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔

وزیر اعلیٰ بلوچستان  گوادر کے ماہی گیروں کیلئے خصوصی پیکج کا اعلان کریں گے، ایکسپریس وے کے متاثرین کا دوبارہ سروے کرکے معاوضہ دیا جائے گا، دھرنے کے بعد حق دو تحریک کے کسی کارکن سے انتقامی کارروائی نہیں کی جائے گی۔

معاہدے کے مطابق سمندری طورفان سے متاثرہ ماہی گیروں کی امداد کیلئے ڈی سی آفس لائحہ عمل طے کرے گا، وفاقی اور صوبائی محکموں میں معذوروں کے کوٹے پر عمل کیا جائے گا۔

اس کے علاوہ مکران کے عوام کی چاردر اور چار دیواری کا احترام کیا جائے گا، کوسٹ گارڈز اور  کسٹمز   پکڑی گئی بوٹس،کشتیاں اور لانچ کو ریلیز کرنے کیلئے تعاون کریں گے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM