صحت و سائنس
16 مارچ ، 2022

مکھی اور مچھر کی زیادہ پیدائش سے لمپی اسکن بیماری پھیلنے کا خطرہ

محکمہ لائیو اسٹاک پنجاب کے ڈائریکٹر ریسرچ ڈاکٹر سجاد حسین کا کہنا ہے کہ صوبے میں فی الحال لمپی اسکن کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا تاہم ممکنہ صورت حال سے نمٹنے کے لے یونین کونسل کی سطح تک ویکسین پہنچا دی گئی ہے۔

جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ڈائریکٹر ریسرچ ڈاکٹر سجاد حسین کا کہنا تھا کہ گرمیوں کا سیزن شروع ہو چکا ہے، مکھی اور مچھر کی پیدائش زیادہ ہونے سے لمپی اسکن بیماری پھیلنےکا خطرہ ہے تاہم ویکسین لگنے سے جانور بیماری سے محفوظ رہیں گے۔

ڈاکٹر سجاد حسین کا کہنا ہے کہ پنجاب لمپی اسکن کی ویکسین خود بنا رہا ہے، لمپی سکن بیماری بکرے یا بھیڑ میں منتقل نہیں ہوتی، جن جانوروں میں منتقل ہوتی ہے ان کا گوشت اور دودھ بھی قابل استعمال ہوتا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ کراچی اور دیگر علاقوں کے ڈیری فارمرز پنجاب سے ویکسین لے کر جانوروں کو لگا رہے ہیں، لمپی سکن کا پی سی آر ٹیسٹ لاہور میں تین سرکاری لیبارٹریوں سے کرایا جا سکتا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM