کھیل
22 جون ، 2022

ظہیر عباس کی طبیعت سے متعلق اہل خانہ کا بیان سامنے آگیا

فوٹو:فائل
فوٹو:فائل

گزشتہ روز یہ خبر سامنے آئی کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور ایشین بریڈ مین ظہیر عباس لندن کے ایک اسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ (آئی سی یو) میں داخل ہیں۔

خاندانی ذرائع کا کہنا تھا کہ 2 دن پہلے ظہیر عباس کو لندن کے سینٹ میری اسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔

تاہم آج ایشین بریڈ مین کی طبیعت سے متعلق ان کے اہل خانہ کا ایک اور بیان سامنے آگیا ہے۔

ذرائع کے مطابق سابق کپتان کے بھائی صغیرعباس کا کہنا ہے کہ ظہیرعباس کی طبیعت بہتر ہے تاہم وہ بدستور آئی سی یو میں ہیں۔

اہل خانہ کے مطابق ظہیرعباس کی امپروومنٹ سلو ہے لیکن کل کے مقابلے میں وہ بہتر نظر آرہے ہیں،انہیں  آکسیجن کے ذریعےسانس دی جارہی ہے، سب سے دعاؤں کی درخواست ہے۔

واضح رہے کہ  74 سالہ ظہیر عباس چند دن پہلے کرتار پور کے گوردوارے میں گرگئے تھے، بعد ازاں وہ براستہ دبئی یکم جون کو لندن کیلئے روانہ ہوئے تاہم دبئی میں قیام کے دوران وہ کورونا میں مبتلا ہوگئے۔

کورونا ٹیسٹ منفی آنے کے بعد ظہیر عباس دبئی سے لندن پہنچے۔ ظہیر عباس کو لندن پہنچ کر نمونیہ اور گردوں کی تکلیف ہوئی۔

خاندانی ذرائع کا کہنا تھا کہ ظہیر عباس ڈائیلیسز پر ہیں اورکمزوری محسوس کررہے ہیں، ڈاکٹروں نے ان سے ملاقات پر پابندی لگا رکھی ہے۔

خیال رہے کہ ظہیر عباس 108 فرسٹ کلاس سنچریاں بنانے والے واحد ایشین کھلاڑی ہیں۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM