ایسا ائیر کنڈیشنر جسے چلانے کے لیے بجلی کی ضرورت نہیں

یہ اے سی سیال نائٹروجن کو استعمال کرکے کام کرتا ہے / فوٹو بشکریہ گرین کینو
یہ اے سی سیال نائٹروجن کو استعمال کرکے کام کرتا ہے / فوٹو بشکریہ گرین کینو

درجہ حرارت میں اضافے کے باعث ائیر کنڈیشنر (اے سی) کا استعمال عام ہوگیا ہے مگر اس وجہ سے بجلی کا بل بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے۔

تو اگر آپ کو ایسا اے سی مل جائے جس کو چلانے کے لیے بجلی کی ضرورت ہی نہ ہو تو پھر؟

جی ہاں ایک کمپنی نے دنیا کا پہلا ایسا اے سی تیار کرنے کا دعویٰ کیا ہے جو بجلی کے بغیر کام کرتا ہے کیونکہ یہ سیال نائٹروجن کو ایندھن کے طور پر استعمال کرتا ہے۔

اس میں کوئی تار نہیں اور نہ یہ ماحول کے لیے نقصان دہ گیسوں کو خارج کرتا ہے۔

کینشو نامی اے سی کو اسرائیلی کمپنی نے تیار کیا ہے۔

یہ نائٹروجن گیس خارج کرکے ٹھنڈک فراہم کرتا ہے اور اس کے اولین یونٹس کی آزمائش اگست کے آخر میں تل ابیب میں کی جائے گی۔

اسے ایک کمپنی گرین کینوکو نے تیار کیا ہے جو 2023 میں اسے عام صارفین کے لیے متعارف کرانے کی خواہشمند ہے۔

کمپنی کے مطابق ہم نے ایک ایسا اے سی تیار کیا ہے جسے بجلی کی ضرورت نہیں بلکہ وہ اپنی توانائی کی ضروریات خود پوری کرتا ہے۔

کمپنی نے بتایا کہ ہیٹنگ کے مقابلے میں کولنگ زیادہ مشکل ہوتی ہے مگر ہم نے ایک بہترین حل تلاش کیا اور چونکہ یہ اب ایک بنیادی ضرورت ہے تو ہم لوگوں کی مدد کرنا چاہتے ہیں۔

سیال نائٹروجن کو متعدد صنعتوں میں کولنگ کے لیے استعمال کیا جارہا ہے مگر کمپنی نے موجودہ ٹیکنالوجی کی بنیاد پر ایک ایسا سسٹم تیار کرنے کا فیصلہ کیا جو مشین کے ارگرد موجود ہوا کو ٹھنڈا کرسکے۔

کمپنی نے مزید بتایا کہ ہماری مشین اس دباؤ سے توانائی پیدا کرتی ہے جو سیال نائٹروجن اور گیس نائٹروجن کے درمیان بنتا ہے،اب تک کسی نے اس طرح سیال نائٹروجن کو استعمال نہیں کیا۔

اسرائیل کے بعد یہ کمپنی یہ پراڈکٹ متحدہ عرب امارات میں لے جانا چاہتی ہے جس کے بعد عالمی سطح پر اسے پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

فی الحال اس کی قیمت کے بارے میں کچھ نہیں بتایا گیا۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM