دنیا
01 دسمبر ، 2022

چینی لاجسٹک نیٹ ورک امریکی فوجی آپریشنز میں خلل ڈال سکتا ہے: رپورٹ

چین عسکری لاجسٹکس اور بیس انفرا اسٹرکچر کو بیرونی ممالک تک پھیلانا چاہتا ہے: امریکی رپورٹ۔ فوٹو فائل
چین عسکری لاجسٹکس اور بیس انفرا اسٹرکچر کو بیرونی ممالک تک پھیلانا چاہتا ہے: امریکی رپورٹ۔ فوٹو فائل

امریکا نے چین کے سکیورٹی عزائم پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیجنگ کا لاجسٹک نیٹ ورک امریکی فوجی آپریشنز میں خلل ڈال سکتا ہے۔

چین کے سیکیورٹی اور عسکری عزائم کے حوالے سے جاری امریکی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین پاکستان کو دیرینہ اسٹریٹجک شراکت دار سمجھتا ہے اور چین عالمی آرڈر کو بدلنے کی نیت اور اہلیت رکھتا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بیلٹ اینڈ روڈ انیشیٹیو جیسے پراجیکٹس سے چین اپنا اثر و رسوخ بڑھا رہا ہے، چین فوجی ہتھیار فروخت کرنے والا دنیا کا پانچواں بڑا ملک ہے، چین سعودی عرب، عراق، یو اے ای اور پاکستان کو چین ہتھیار فروخت کرتا ہے۔

امریکی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ افغانستان سے امریکی انخلا کے بعد چین نے امریکا اور اس کے اتحادی ممالک کا اثر ختم کرنے کی کوششیں کیں، گزشتہ 5 برس میں چین نے پاکستان اور روس کےساتھ تعلقات مضبوط کیے، چین اس مقصد کے لیے اپنی آرمی کو استعمال کر رہا ہے، بی آر آئی کو اقتصادی استحصال کے لیے استعمال بھی کیا جا رہا ہے۔

امریکی وزارت دفاع کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین اپنی عسکری طاقت کو سرحد پار بھی بڑھانا چاہتا ہے، چین عسکری لاجسٹکس اور بیس انفرا اسٹرکچر کو بیرونی ممالک تک پھیلانا چاہتا ہے، عالمی سطح پر چینی لاجسٹک نیٹ ورک امریکی فوجی آپریشنز میں خلل ڈال سکتا ہے، دیگر ممالک کے علاوہ پاکستان میں بھی چین کے لاجسٹکس انفرا اسٹرکچر کا امکان ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM