ناسا کو پیچھے چھوڑ کر کون سب سے پہلے چاند پر جانے والا ہے؟

جاپانی ارب پتی اپنے ساتھ کئی افراد کو چاند پر لے کر جائیں گے / رائٹرز فوٹو
جاپانی ارب پتی اپنے ساتھ کئی افراد کو چاند پر لے کر جائیں گے / رائٹرز فوٹو

امریکی خلائی ادارے ناسا کی جانب سے انسانوں کو چاند پر واپس 2025 تک بھیجے جانے کا امکان ہے۔

مگر ایلون مسک کی کمپنی اسپیس ایکس 2023 میں ہی انسانوں کو چاند پر لے جانے کے لیے تیار ہے اور یہ خلاباز نہیں بلکہ عام افراد ہوں گے۔

اسپیس ایکس کی جانب سے دنیا کے پہلے خلائی سیاح یوساکوما یزاوا کو چاند پر بھیجا جائے گا۔

جاپان سے تعلق رکھنے والے ارب پتی یوساکوما یزاوا اس مشن میں اپنے ساتھ مختلف فنکار، ایتھلیٹس اور دیگر کو لے کر جائیں گے۔

اس بات کا اعلان 47 سالہ یوساکوما یزاوا نے ایک ویڈیو میں کیا جو 9 دسمبر کو جاری کی گئی۔

جاپانی ارب پتی نے بتایا کہ جنوبی کورین گلوکار ٹی او پی، یوٹیوبر ٹم ڈوڈ، اداکار دیو جوشی اور فوٹوگرافر کریم ایلیا اس مشن میں نے ان کے ساتھ ہوں گے۔

امریکی اسنو بورڈر Kaitlyn Farrington اور جاپانی ڈانسر Miyu کو بیک اپ میں رکھا گیا ہے۔

یوساکوما یزاوا نے دسمبر 2021 میں انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن جاکر پہلے خلائی سیاح کا اعزاز حاصل کیا تھا۔

انہیں ستمبر 2018 میں اسپیس ایکس نے چاند کے پہلے نجی سیاحتی دورے کے لیے منتخب کیا تھا۔

2021 میں انہوں نے لوگوں کو کہا تھا کہ وہ انہیں ویڈیوز بھیجیں تاکہ وہ چاند کے مشن پر ان میں سے کچھ افراد کو منتخب کرسکیں۔

گزشتہ دنوں اسپیس ایکس کے بانی ایلون مسک سے آن لائن بات چیت کرنے کے بعد جاپانی ارب پتی نے 9 دسمبر کو اہم اعلان کرنے کی بات کی تھی۔

اسپیس ایکس کی جانب سے اسٹارشپ کے ذریعے اس مشن کو چاند پر بھیجا جائے گا اور فی الحال کمپنی نے مشن میں تاخیر کا اعلان نہیں کیا۔

مگر اسٹار شپ کو اب تک آزمائشی طور پر لانچ نہیں کیا جاسکا ہے اور کمپنی نے دسمبر میں اسے پہلی بار زمین کے مدار پر بھیجنے کا منصوبہ بنایا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM