Can't connect right now! retry

دنیا کا پہلا 'ڈرائیو تھرو بھوت بنگلا '

فوٹو: بشکریہ آڈیٹی سینٹرل

عالمگیر وبا کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر کے بے شمار معاملات تبدیل ہو چکے ہیں  جس میں اب لوگ باہر نکلتے ہوئے احتیاط کرنے کے ساتھ ساتھ ایک دوسرے سے دوری اختیار کرتے ہیں۔

کورونا وائرس کے دوران دنیا بھر میں ریسٹورینٹ میں بھی تبدیلیاں کی گئیں جب کہ بالکونی کانسرٹس، ڈرائیو تھرو سنیما اور شادیوں کی بھی خبریں سامنے آئیں۔

فوٹو: بشکریہ آڈیٹی سینٹرل


فوٹو: بشکریہ آڈیٹی سینٹرل

اب حال ہی میں جاپان میں دنیا کا پہلا 'ڈرائیو تھرو بھوت بنگلا' بنایا گیا ہے جس میں آپ کو بھوت بھی سماجی دوری کا خیال کرتے ہوئے ڈرائیں گے۔

ڈرائیو تھرو بھوت بنگلے کا آئیڈیا پیش کرنے والی کمپنی کے مطابق اس بھوت بنگلے کا مزہ لینے والے شخص کو اپنی گاڑی سے باہر نکلنے کی ضرورت نہیں ہوگی جب کہ ان کی گاڑیوں کے شیشے بھی بند ہوں گے تاکہ وائرس کا خدشہ نہ ہو۔

اس بھوت بنگلے کا تجربہ کرنے کے لیے آنے والے لوگوں کو اپنی گاڑی میں آنا ہوگا جب کہ انہیں 8000 ین یعنی 75 ڈالرز کی رقم ادا کرنی ہوگی۔

اگر کسی صارف کے پاس اپنی گاڑی نہیں ہے اور وہ پھر بھی ڈرائیو تھرو بھوت بنگلے کا مزہ لینا چاہتے ہیں تو انہیں بھوت بنگلے کی فیس کے علاوہ 1000 ین الگ سے دینے ہوں گے جس کے بعد انہیں کمپنی کی اپنی گاڑی کی سہولت دی جائے گی جسے ہر سیشن کے بعد جراثیم سے پاک کیا جائے گا۔

اس منفرد بھوت بنگے کو جاپان کے دارالحکومت ٹوکیو کے ضلع ازابو کے ایک ڈراؤنے گیراج میں بنایا گیا ہے جب کہ بھوت بنگلے کا ایک سیشن 20 منٹ کا ہوگا جس میں طرح طرح کے بھوت اور زومبیز صارفین کو ڈرائیں گے۔  

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM