Can't connect right now! retry

پاکستان
12 ستمبر ، 2018

بجلی چوری روکنے کیلئے آرٹیفیشنل انٹیلی جنس ٹیکنالوجی تیار

یہ ٹیکنالوجی ایک چپ کی مدد سے کام کرے گی جو میٹر میں خفیہ طور پر نصب ہو گی، حکام۔ فوٹو: فائل

وزارت آئی ٹی کے حکام کا کہنا ہے کہ بجلی چوری کی روک تھام کے لیے آرٹیفیشنل انٹیلی جنس کی مدد سے کام کرنے والی جدید ٹیکنالوجی تیار کر لی گئی ہے۔

سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے آئی ٹی اور ٹیلی کام کا اجلاس سینیٹر روبینہ خالد کی زیرصدارت اسلام آباد میں ہوا جس میں بجلی چوری کی روک تھام کے لیے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔

آئی ٹی حکام نے اجلاس کو بتایا کہ بجلی چوری کی روک تھام کے لیے جید ٹیکنالوجی تیار کر لی گئی ہے جو آرٹیفیشل انٹیلی جنس کی مدد سے کام کرے گا۔

آئی ٹی حکام کے مطابق اس ٹیکنالوجی کی مدد سے 90 فیصد لائن لاسز اور بجلی کی چوری روکی جا سکتی ہے۔

حکام کے مطابق یہ ٹیکنالوجی ایک چپ کی مدد سے کام کرے گی جو میٹر میں خفیہ طور پر نصب ہو گی۔

وزارت آئی ٹی حکام کا کہنا ہے کہ ٹیکنالوجی اسمارٹ میٹرز اور اسمارٹ گرڈ سے بہتر ہے اور اس ٹیکنالوجی کی مدد سے صارفین کو پی ٹی سی ایل کی طرح بلنگ کی جاتی ہے۔

حکام نے بتایا کہ اس ٹیکنالوجی کا تجربہ ایم ای ایس پشاور اور ایم ای ایس راولپنڈی میں کیا گیا جس سے ایک سال میں 35 فیصد بجلی چوری روکنے میں کامیابی ہوئی۔

آئی ٹی حکام کا کہنا ہے کہ حکومت ٹیکنالوجی کو وزارت توانائی کے حوالے کرے تو فائدہ ہو گا۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ چینی کمپنی بھی ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے 46 ملین ڈالر سرمایہ کاری کرنا چاہتی تھی لیکن دو سال تک پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ بورڈ کا اجلاس نہ ہونے کی وجہ سے چینی کمپنی نے دلچسپی نہ دکھائی۔

آئی ٹی حکام نے بتایا کہ سابق حکومت کو بھی اس ٹیکنالوجی کے حوالے سے بریفنگ دی گئی تھی مگر انہوں نے کوئی دلچسپی ظاہر نہ کی۔

سینیٹ کی کمیٹی برائے آئی ٹی اور ٹیلی کام نے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال پر تفصیلی بریفنگ آئندہ اجلاس میں طلب کر لی ہے۔

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM