لندن: انتہائی نگہداشت وارڈ میں داخل ظہیر عباس کی حالت بہتر ہونے لگی

نمونیا کے سبب ظہیر عباس کو ایمرجنسی میں اسپتال پہنچایا گیا تھا اب ان کی طبیعت میں بہتری آنا شروع ہوگئی ہے: اہلیہ، فوٹو: فائل
نمونیا کے سبب ظہیر عباس کو ایمرجنسی میں اسپتال پہنچایا گیا تھا اب ان کی طبیعت میں بہتری آنا شروع ہوگئی ہے: اہلیہ، فوٹو: فائل

لندن میں انتہائی نگہداشت وارڈ (آئی سی یو) میں داخل پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر ظہیر عباس کی طبعیت بہتر ہو رہی ہے۔

 ظہیر عباس کی اہلیہ ثمینہ عباس نے جیو نیوز سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ڈاکٹرز نے بہتر نگہداشت کیلئے انھیں آئی سی یو میں رکھا ہوا ہے۔

سابق کرکٹر کی اہلیہ ثمینہ عباس نے مزید بتایہ کہ 74 سالہ ظہیر عباس دبئی میں کورونا میں مبتلا ہوگئے تھے بعد میں پی سی آر  ٹیسٹ کا نتیجہ منفی آنے پر گزشتہ اتوار کو انہیں دبئی سے لندن منتقل کیا گیا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ نمونیا کے  سبب انہیں ایمرجنسی میں اسپتال پہنچایا گیا تھا، اب ان کی طبیعت میں بہتری آنا شروع ہوگئی ہے تاہم ڈاکٹرز نے بہتر نگہداشت کے لیے اب تک انہیں آئی سی یو میں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ثمینہ عباس نے بتایا کہ وہ اسپتال میں ڈائیلاسز پر ہیں اور انھیں آکسیجن بھی دی جارہی ہے جب کہ انہیں کسی بھی وقت گردے کے علاج کیلئے خصوصی مہارت رکھنے والے کسی دوسرے اسپتال منتقل کیا جاسکتا ہے تاہم ابھی تک ڈاکٹرز نے اس حوالے سے  حتمی فیصلہ نہیں کیا ہے۔

خیال رہے کہ سابق ٹیسٹ کرکٹر ظہیر عباس کو اپنی شاندار بیٹنگ کے سبب ایشین بریڈ میں کے نام سے جانا جاتا ہے، ظہیر عباس 16-2015 کے عرصے کے دوران انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے صدر کے عہدے پر بھی فائز رہے ہیں۔

ظہیر عباس نے اپنے کرکٹ کیریئر میں ایک سو سے زائد سنچریاں اسکور کیں جب کہ 14 ٹیسٹ میچز کے دوران قومی ٹیم کی کپتانی کے فرائض بھی سرانجام دیے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM