Can't connect right now! retry
Advertisement

پاکستان
07 دسمبر ، 2017

بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت کہنا بہت خطرناک ہوگا، میئر لندن

لندن کے میئر صادق خان نے کہا ہے کہ اگر امریکا کہتا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس اسرائیل کا دارالحکومت ہے تو یہ بہت خطرناک بات ہے۔

جیو نیوز کے پروگرام 'کیپٹل ٹاک' کے میزبان حامد میر کو انٹرویو دیتے ہوئے میئر لندن صادق خان کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خطاب پر تحفظات ہیں، مقبوضہ بیت المقدس اسرائیل اور فلسطین کے درمیان قیام امن کے لئے جاری امن مذاکرات کا حصہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر امریکا کہتا ہے کہ بیت المقدس اسرائیل کا دارالحکومت ہے کہ تو بہت خطرناک ہے جب کہ فرانسیسی صدر اور برطانوی وزیراعظم سمیت دیگر عالمی رہنما امریکی اعلان کی مذمت کرچکے ہیں۔

میئر لندن نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ عالمی سیاست نہیں سمجھتے، ہمیں متحد ہو کر ٹرمپ کو پیغام دینا ہے کہ وہ غلطی پر ہیں اور ہمیں ایسا کرنا چاہیے۔


امریکی صدر کے دورہ لندن سے متعلق سوال پر میئر صادق خان نے کہا کہ سنا ہے کہ فروری 2018 میں وہ برطانیہ کا دورہ کریں گے لیکن وہ سرکاری دورہ نہیں ہوگا، دیکھیں گے کہ کیا ہوگا، لندن میں ٹرمپ کے فینز نہیں ہیں اگر وہ آئیں تو انہیں بہت سے مظاہروں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

میئر لندن نے کہا کہ اسلام اور مسلمانوں سے متعلق ڈونلڈ ٹرمپ کے خیالات اچھے نہیں، انہوں نے کہا تھا کہ پوری دنیا سے مسلمانوں کا داخلہ بند کریں گے، میرا مشورہ ہے کہ اسلام اور مسلمانوں کے لئے ڈونلڈ ٹرمپ کو اپنے خیالات بدلنا چاہیے۔

میئر صادق خان کا کہنا تھا کہ لوگ کہتے ہیں کہ امریکا اور برطانیہ کے خصوصی تعلقات ہیں، لیکن اگر امریکا کوئی خراب چیز کرتا ہے تو اسے بتایا جاتا ہے کہ آپ غلط کررہے ہیں۔ 

نوٹ: میئر لندن صادق خان کا مکمل انٹرویو آپ آج رات 8 بجکر 5 منٹ پر جیو نیوز پر دیکھ سکیں گے۔

Advertisement