گیس بحران سے تنگ کراچی کے ایکسپورٹرز نے لکڑیوں سے فیکٹری چلانا شروع کردی

صوبہ سندھ کے سب سے پرانےکراچی کے سائٹ انڈسٹریل ایریا کے بڑے ایکسپورٹرز نے گیس بحران سے تنگ  آکر لکڑیوں سے فیکٹری چلانا شروع کردی ہے۔

قائد اعظم کی جانب سے افتتاح کیےگئے سائٹ انڈسٹریل ایریا کی فیکٹریوں میں گیس بند ہونے کے بعد بڑے ایکسپورٹرز نے سیکڑوں سال پرانا طریقہ اپناتے ہوئے ہزاروں ٹن لکڑیاں خریدکر فیکٹری کا بوائلر چلانا شروع کردیا۔

فیکٹری مالکان کا کہنا ہےکہ گیس کے مقابلے میں لکڑی دگنی مہنگی ہے۔

خیال رہےکہ گیس میں خودکفیل صوبہ سندھ میں آج سے 28 فروری تک فیکٹریوں کی گیس بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 وہ ایکسپورٹرز جو بین الاقوامی منڈی میں پاکستان سے زائد مال خریدنےکے لیے بات کرتے ہیں وہ اب لکڑی کی ٹال والوں سے بات چیت کر رہے ہیں ، ڈالر کی قدر اور سیاسی صورتحال نے فیکٹری مالکان کو الگ مشکل میں ڈال رکھا ہے۔

مختلف فیکٹری مالکان نے فرنس آئل اور ایل پی جی سمیت مختلف متبادل ذرائع سے فیکٹریاں چلانا شروع کی ہیں تاہم لکڑی جلا کر بڑی فیکٹری چلانے کا آئیڈیا کراچی میں نیا ہے۔

مزید خبریں :

Notification Management


پاکستان
دنیا
کاروبار
کھیل
انٹرٹینمنٹ
صحت و سائنس
دلچسپ و عجیب

ڈیسک ٹاپ نوٹیفکیشن کے لیے سبسکرائب کریں
Powered by IMM